Saturday, April 17, 2021

جمہوریہ اسٹونیا میں پہلی بار ایک خاتون کاجا کلاس وزیر اعظم بن گئیں

اسٹونیا میں پچھلی حکومت کرپشن کے الزامات کے بعد مستعفی ہو گئی تھی۔ جبکہ پہلی خاتون وزیر اعظم کی 14 رکنی کابینہ میں نصف تعداد خواتین کی ہے، جن میں وزیر خارجہ اور وزیر خزانہ بھی شامل ہیں

بحیرہ بالٹک کے کنارے آباد 15 لاکھ کی آبادی والے ایک چھوٹے سے یورپی ملک اسٹونیا کی تاریخ میں ایک خاتون صدر مملکت کے بعد وزیر اعظم کے عہدے پر بھی ایک خاتون فائز ہوگئیں ہیں۔

اسٹونیا میں دو سیاسی جماعتوں نے اتحادی حکومت بنانے اور پہلی بار کسی خاتون کو وزیر اعظم کے عہدے پر فائز کرنے پر اتفاق کیا تھا۔ اسٹونیا کی بڑی سیاسی جماعتوں ریفارم اور سینٹر پارٹی کے درمیان اتحاد ہونے کے بعد 43 سالہ کاجا کلاس کو وزیر اعظم منتخب کیا گیا ۔ انہوں نے عہدے کی ذمہ داریاں سنبھال کر نئی تاریخ رقم کردی۔ کاجا کلاس کے والد بھی اسٹونیا کے وزیر اعظم رہ چکے ہیں۔

اسٹونیا سابق سوویت یونین کا حصہ رہا ہے۔ جہاں ایک خاتون کیرسٹی کالجلیڈ چار سال سے صدارت کے عہدے پر فائز ہیں۔ جبکہ اس ملک کی پہلی وزر اعظم نے اپنی 14 رکنی کابینہ میں نصف تعداد خواتین کی رکھی ہیں، جن میں وزیر خارجہ اور وزیر خزانہ بھی شامل ہیں۔

عالمی منظر کے بارے یہ خبر بھی پڑھیں ۔ چین کی پیپلز لبریشن آرمی کی لداخ کے اہم مقامات پر جنگی مشقیں جاری ہیں

کاجا کلاس 2012 سے عملی سیاست میں ہیں، انہیں 2019 میں  ریفارم پارٹی کا چیئرمین بنایا گیا تھا۔ ان کی سیاسی جماعت نے 2019 میں ہونے والے انتخابات میں بھی نمایاں کامیابی حاصل کی تھی مگر دوسری تین سیاسی جماعتوں نے اتحاد بنا کر انہیں حکومت بنانے سے دور رکھا تھا۔

پچھلی اتحادی حکومت کے وزیر اعظم اور وزیروں پر ایک ریئل اسٹیٹ کمپنی کو سیاسی فوائد دینے کے الزامات کے بعد وزیر اعظم اور کابینہ مستعفی ہو گئی تھی۔ جس کے  بعد کاجا کلاس کی سیاسی جماعت نے سینٹر پارٹی سے اتحاد کرکے نئی حکومت تشکیل دی ہے۔

عالمی حالات حاضرہ پر میرا یہ کالم بھی پڑھیں

سامراج اور مہاراج کا بدلتا ہوا عالمی منظر نامہ اور پاکستان

LATEST NEWS

CHINESE NEWS

OUR DEFENCE NEWS SITE

spot_img

INDIAN NEWS