Monday, August 2, 2021

ہونڈا موٹر سائیکل کی قیمتوں میں چار ماہ میں تیسری بار اضافہ ، حکومت پرائس کنٹرول میں مکمل ناکام

حکومت کی پرائس کنٹرول میں مکمل ناکامی، وزارت خزانہ اور کمپنی کی ملی بھگت کی وجہ سے 2021ء میں صرف 4 ماہ کے دوران ہونڈا سی ڈی 70 کی قیمت میں اب تک 6 ہزار 6 سو روپے کا اضافہ ہو چکا ہے۔

ڈالر کی قیمت گرنے کی وجہ سے درآمدی لاگت کم ہونے کے باوجود اٹلس ہونڈا موٹرسائیکلوں کی قیمت میں 16 سو سے 3 ہزار روپے کا اضافہ کیا ہے۔ حکومت اشیائے ضرورت سے لیکر موٹر سائیکلوں اور میڈیسن تک قیمتوں پر کنٹرول اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کی غریب شکن معاشی غنڈہ گردی روکنے میں بری طرح ناکام ہو چکی ہے

 یاد رہے کہ اگست 2020 سے ڈالر کی قیمت کم ہونے سے درآمدی لاگت میں نمایاں کمی ہوئی ہے۔ لیکن اس کے باوجود موٹر سائیکل کمپنیوں نے قیمتوں میں بلا جواز اضافے کا سلسلہ جاری رکھا ہے۔ جبکہ مہنگائی روکنے کی دعویدار حکومت پراسرار طور پر خاموش تماشائی ہے۔

کمپنی کی جانب سے سی ڈی 70 کی قیمت میں 16 سو روپے کا اضافہ کیا گیا۔ اس نئے اضافے کے بعد سی ڈی 70 کی قیمت 82 ہزار 900 روپے سے بڑھ کر 84 ہزار 500 روپے ہوگئی ہے۔

حکومت کی پرائس کنٹرول میں مکمل ناکامی، وزارت خزانہ اور کمپنی کی ملی بھگت کی وجہ سے 2021ء میں صرف 4 ماہ کے دوران ہونڈا سی ڈی 70 کی قیمت میں اب تک 6 ہزار 6 سو روپے کا اضافہ ہو چکا ہے۔

ہونڈا سی ڈی 70 ڈریم کی قیمت میں 16 سو جبکہ پرائڈر کی قیمت میں 3 ہزار روپے کا اضافہ کیا گیا۔ جس کے بعد سی ڈی 70 ڈریم کی قیمت 88 ہزار 900 روپے سے بڑھ کر 90 ہزار 500 روپے جبکہ ہونڈا پرائڈر 100 سی سی کی قیمت ایک لاکھ 14 ہزار 500 روپے سے بڑھ کر ایک لاکھ 17 ہزار 500 روپے ہوگئی ہے۔

سی جی 125 کی قیمت 3 ہزار روپے اضافے سے ایک لاکھ 36 ہزار 500 سے بڑھ کر ایک لاکھ 39 ہزار 500 روپے ہوگئی ہے۔ سی جی 125 ایس ای کو مزید 3 ہزار روپے مہنگا کردیا گیا اور اس کی قیمت ایک لاکھ 64 ہزار 500 سے بڑھ کر ایک لاکھ 67 ہزار 500 روپے ہوگئی ہے۔

سی بی 125 ایف کی قیمت 3 ہزار روپے کے اضافے کے ساتھ ایک لاکھ 97 ہزار 500 روپے کی بجائے 2 لاکھ 500 روپے ہوگئی ہے۔ سی بی 150 ایف کی قیمت میں بھی 3 ہزار روپے کا اضافہ ہوا ہے اور وہ 2 لاکھ 52 ہزار 500 روپے کی بجائے 2 لاکھ 55 ہزار 500 روپے میں دستیاب ہوگی۔

حکومت کی طرف سے پرائس کنٹرول میں ناکامی اور موٹر سائیکل کمپنیوں کی آزادانہ قیمتیں بڑھانے کی غریب شکن پالیسی کا اندازہ اس سے لگایا جا سکتا ہے ۔ کہ ابھی مارچ کے آخر میں موٹرسائیکلوں کی قیمتوں میں ایک ہزار سے 16 سو روپے کا اضافہ کیا گیا تھا۔


حالیہ ڈھائی سالہ دور میں معاشی تباہی کے باے یہ خبر بھی پڑھیں

پاکستان کے قرضوں میں 37 کھرب اور پی ٹی آئی کے ڈھائی سالہ دور میں 21 کھرب کا اضافہ

 

LATEST NEWS

CHINESE NEWS

OUR DEFENCE NEWS SITE

spot_img

INDIAN NEWS