Monday, August 2, 2021

ہندوستان کسان ریلی نے دہلی کے لال قلعہ پر اپنا پرچم لہرا دیا۔ دو سکھ نوجوان ہلاک درجنوں زخمی

بھارتی پولیس مظاہرین پر قابو پانے کی کوشش کر رہی ہے۔ تاہم کسانوں سے شدید جھڑپوں کی خبریں موصول ہو رہی ہیں۔ دہلی میٹرو ریل کارپوریشن نے مختلف روٹ پر اپنی سروس معطل کر دی ہے

ہندوستان کا یوم جمہوریہ نریندرا مودی سرکار کیخلاف کسانوں کے احتجاج کا دن بن گیا ۔ آج بھارتی یوم جمہوریہ پر نریندرا مودی کی زرعی پالیسیوں کیخلاف احتجاج کرنے والے ہزاروں کسان اپنے ٹریکٹروں سمیت دارالحکومت دہلی میں داخل ہو گئے۔

مشتعل احتجاجی کسانوں نے دہلی کے لال قلعے پر اپنا پرچم لہرا دیا۔ بھارتی پولیس نے مظاہرین کو  روکنے کیلیے سخت لاٹھی چارج کیا اور آنسو گیس کا استعمال کیا ۔ جس سے اطلاعات کے مطابق کم از کم دو شخص ہلاک اور درجنوں زخمی ہوئے ہیں۔

نریندر مودی سرکار کے متنازعہ زرعی قوانین کے خلاف احتجاج کرنے والے کسان گزشتہ دو ماہ سے زیادہ مدت سے دہلی کی سرحدوں پر موجود ہیں۔ یاد رہے کہ آج دہلی پولیس نے انہیں کچھ شرائط کے ساتھ ریلی کی اجازت دی تھی۔ لیکن احتجاجی  کسان شرائط کے مطابق وقت سے پہلے اور 5 ہزار کی طے شدہ تعداد کی بجائے 2 لاکھ سے زائد ٹریکٹروں کے ساتھ تین مختلف علاقوں سے دہلی میں داخل ہو گئے۔ انہوں نے راستے میں پولیس کی لگائی ہوئی رکاوٹوں کو توڑ دیا۔ جواب میں پولیس نے ان پر لاٹھی چارج اور آنسو گیس کا استعمال کیا۔ پولیس اور کسانوں کے درمیان جھڑپ میں دو شخص ہلاک اور درجنوں افراد زخمی ہو گئے ۔

دہلی کے تاریخی لال قلعے پر کسان پرچم لہرایا گیا

احتجاجی کسان دارالحکومت دہلی کے وسطی علاقے آئی ٹی او چوک کے قریب تک پہنچ گئے۔ اس مقام سے بھارتی پارلیمنٹ اور پریڈ کی جگہ یعنی راج پتھ صرف دو کلومیٹر دور ہے۔ کسان ٹریکٹر پریڈ میں شامل ایک گروپ دہلی کے تاریخی لال قلعے تک پہنچ گیا اور اس نے کسانوں کی تنظیم کا پرچم قلعے کی فصیل پر اس جگہ لہرایا، جہاں بھارتی وزیر اعظم ہر سال یوم آزادی کے موقع پر روایتی طور پر پرچم لہراتے اور قوم سے خطاب کرتے ہیں۔

بھارتی پولیس مظاہرین پر قابو پانے کی کوشش کر رہی ہے۔ تاہم کسانوں سے مسلسل جھڑپوں کی خبریں موصول ہو رہی ہیں۔ دہلی میٹرو ریل کارپوریشن نے مختلف روٹ پر اپنی سروس معطل کر دی ہے، جس کی وجہ سے مسافروں کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

احتجاجی کسانوں کی ٹریکٹر پریڈ میں بھارتی پنجاب، ہریانہ اور اتر پردیش کے کسانوں کی کافی بڑی تعداد موجود ہے۔ جو کسان اس پریڈ میں شرکت کیلیے دہلی نہیں پہنچ سکے وہ اپنے اپنے علاقوں میں احتجاجی ریلیاں نکال رہے ہیں۔ بھارت کی درجنوں ریاستوں میں بھی آج کسانوں کی ریلیاں نکالی جا رہی ہیں۔

آج ممبئی کے مشہور آزاد میدان میں بھی ہزاروں کسان جمع ہیں۔ ان کسانوں کا کہنا ہے کہ وہ ٹریکٹر پریڈ میں شامل کسانوں اور مودی حکومت کے کسان قوانین کیخلاف ان کسانوں کے جائز مطالبات کی بھرپور حمایت کرتے ہیں۔

کسان قوانین کے بارے یہ خبر بھی پڑیں

ہندوستانی سپریم کورٹ نے بھارت میں فارمر قوانین پر عمل درامد روک دیا

LATEST NEWS

CHINESE NEWS

OUR DEFENCE NEWS SITE

spot_img

INDIAN NEWS