Saturday, April 17, 2021

پاکستان کے قرضوں میں 37 کھرب اور پی ٹی آئی کے ڈھائی سالہ دور میں 21 کھرب کا اضافہ

یاد رہے کہ نون لیگی حکومت کے 5 سالہ دور میں ملکی قرضوں میں 15 ہزار 561 ارب روپے کا اضافہ ہوا تھا

سٹیٹ بینک آف پاکستان کی رپورٹ کے مطابق گذشتہ ایک سال کے دوران پاکستان کے ذمہ مجموعی قرضوں میں 36 کھرب اور 92 ارب روپے کا اضافہ ہوا ہے۔ اسٹیٹ بینک نے گذشتہ برس نومبر 2020 تک پاکستان کے واجب الادا  قرضوں کی تفصیل جاری کین ہیں ۔ جن کے کے مطابق نومبر 2020 تک پاکستان کے قرضوں کا حجم 358 کھرب اور 22 ارب روپے تھا۔

پاکیستانی طیارے کی ملائشیا میں بندش کے بارے یہ خبر بھی پڑھیں

ملائشین حکام نے لیز کے واجبات کی عدم ادائیگی پر پی آئی اے کا طیارہ قبضے میں لے لیا

موجودہ حکومت کے ڈھائی سالہ دور حکومت میں 14 ہزار 922 ارب روپے قرض بڑھا ہے۔ جس سے پاکستانی معیشت کوزبردست نقصان پہنچا ہے۔ خیال رہےکہ یہ مالی بوجھ مجموعی ملکی پیداوار (جی ڈی پی) کے 98.3 فیصد کے برابر ہے۔ یاد رہے کہ نون لیگی حکومت کے 5 سالہ دور میں ملکی قرضوں میں 15 ہزار 561 ارب روپے کا اضافہ ہوا تھا۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے 5 سالہ دور میں قرضوں میں 8 ہزار 200 ارب روپے کا اضافہ ہواتھا ۔ جبکہ مشرف کے 9 سالہ دور میں قرضوں میں صرف 3 ہزار 200 ارب روپے کا اضافہ ہوا تھا۔

پاکستان کے روبوٹکس ٹینگ کے بارے یہ مضمون بھی پڑھیں

پاکستان کے لیزر گائیڈڈ ہتھیاروں سے لیس زمینی ڈرون روبوٹکس ٹینک

LATEST NEWS

CHINESE NEWS

OUR DEFENCE NEWS SITE

spot_img

INDIAN NEWS