Saturday, April 17, 2021

ترکی کے صدر ادر اردوگان نے یورپی یونین سے بہتر تعلقات کی خواہش کا اظہار کیا ہے

صدر اردوگان نے یورپی سفیروں سے ملاقات کے دوران کہا ہے کہ وہ یورپی یونین کے ساتھ باہمی تعلقات کو ماضی جیسا معمول پر لانے کی آرزو رکھتے ہیں۔ 

 ترکی کے صدر رجب طیب  ایردوآن نے یورپی یونین کے سفیروں کے ساتھ حالیہ ملاقات میں یورپی یونین کے ساتھ مثبت اور خوشگوار تعلقات کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ترکی یورپی یونین کے ساتھ سفارتی اور معاشی تعلقات کو بہتر بنانا چاہتا ہے۔ ان کے مطابق باہمی خوشگوار تعلقات ایک دوسرے کے مفادات کیلیے سود مند ثابت ہوں گے۔

 خیال رہے کہ جہاں صدر ایردوگان کی بعض خارجہ پالیسیوں کی وجہ سے ترکی اور بلجئیم کے تعلقات کشیدگی کا شکار ہیں۔ وہاں مشرقی بحیرہ روم میں یونان کے ساتھ اور مشرق میں لیبیا اور مشرق وسطی کی صورت حال کیلئے فرانس کے ساتھ  تنازعات اٹھے ہیں۔

عالمی مبصرین کہتے ہیں کہ مغربی ممالک کی طرف سے پابندیوں اور اممریکہ کے نئے صدر جو بائیڈن کی طرف سے کڑے موقف کے خدشات  کے پیش نظر ترکی نے یورپی یونین کے سفیروں سے مذاکرات کے دوران مثبت اور نرم روی کے ساتھ خوشگوار تعلقات کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

امریکہ اور ترکی کے تنازعہ کے بارے یہ خبر بھی پڑھیں

ترکی اور امریکہ ایس – 400 ڈیفنس سسٹم ایشو پر پابندیوں پر مزاکرات کریں گے

صدر اردوگان نے یورپی سفیروں سے ملاقات کے دوران کہا ہے کہ وہ یورپی یونین کے ساتھ باہمی تعلقات کو ماضی جیسا معمول پر لانے کی آرزو رکھتے ہیں۔ ترکی اور یونان پرانے سمندری تنازعہ کو اس 25 جنوری کو استنبول مذاکرات میں حل کرنے کیلئے پر امید ہیں۔ صدر ایردوگان نے کہا ہے کہ انہیں امید ہے کہ یونان کے ساتھ مذاکرات کے بعد نئے پر امن دور کی شروعات ہو گی ۔

یاد رہے کہ فرانسیسی صدر ایمانوئل میکروں اور ترکی کے درمیان تلخ اور کڑوے معاملات کی وجہ سے دونوں ممالک کے تعالقات کشیدگی کا شکار رہے ہیں ۔ لیکن صدر اردوگان نے فرانس  کے ساتھ معمول کے تعلقات کی خواہش کا اظہار کیا پے۔

فرانس کے وزیر کلیمانت بوین نے اردوگان کے بیانات کے جواب میں قدرے سخت رویہ ظاہر کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ صدر اردوگان کے بیانات کا جائزہ لے رہے ہیں۔ انہوں نے طنزیہ انداز میں کہا کہ وہ ماضی میں بھی ترکی کی طرف سے کچھ ایسے ہی ڈرامے دیکھ چکے ہیں۔

ان کے مطابق کہ یورپی یونین کی جانب سے ترکی کیخلاف سخت موقف کے نتائج ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم حالات کا جائزہ لے رہے ہیں ۔ ممکن ہے کہ یورپی یونین کی طرف سے ترکی کیخلاف پابندیاں عائد کی جا سکتی ہیں۔

ترکی اور یورپی ممالک کے تنازعہ کے بارے یہ مضمون بھی پڑھیں

آذربائیجان سے بحیرہ روم تک کشمیر اور فلسطین کا حامی ترکی عالمی ٹارگٹ ہے

LATEST NEWS

CHINESE NEWS

OUR DEFENCE NEWS SITE

spot_img

INDIAN NEWS